Home / Archives / مردم شماری بارے پارٹی نے جن خدشات کا اظہار کیا تھا وہ درست ثابت ہورہے ہیں، آغا حسن

مردم شماری بارے پارٹی نے جن خدشات کا اظہار کیا تھا وہ درست ثابت ہورہے ہیں، آغا حسن

کوئٹہ : بلوچ عوام بی این پی کو اپنا نجات دھندہ پارٹی سمجھتے ہیں مردم شماری غیر جانبدار صاف وشفاف ہونی چاہئے ہمارے خدشات اور تحفظات کو معزز عدالت نے فیصلہ دے کر درست ثابت کروایا افغان مہا جرین کو مردم شماری سے دور رکھا جائے اور صوبائی حکومت کی سیاسی جماعتوں کی مداخلت فوری طور پر بند کی جائے مردم شماری کو2013 کے انتخابات میں جو دھاندلی کی گئی ایسا نہ بنایا جائے ان خیالات کا اظہار بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات آغا حسن بلوچ ایڈووکیٹ نے سید عابد علی شاہ کی قیادت میں پارٹی میں شامل ہونیوالے دوستوں سے کیا اس موقع پر ثناء مسرور بلوچ ، مصطفی مگسی اور پارٹی میں نئے شامل ہونیوالے سید محمد نبی ، سید مختار شاہ ، سید زبیر شاہ ، سید طاہر شاہ ، سید مجید شاہ بھی موجو دتھے اس موقع پر آغا حسن بلوچ ایڈووکیٹ نے کہا کہ نے پارٹی میں نئے شامل کی شمولیت خوش آئند ہے کیونکہ بلوچ قوم کے فرزندوں نے پارٹی کو نجات دھندہ قومی جماعت سمجھتے ہیں اور سردار اختر جان مینگل کی قیادت وقت اورحالات کی ضرورت ہے بی این پی نے ہمیشہ بلوچ قومی حقوق کی حصول کی جدوجہد کو پروان چڑھایا کبھی بھی قومی ، اجتماعی مفادات کے حصول کے لئے ایک انچ بھی پیچھے نہیں ہٹا بلکہ بلوچستان کے جملہ مسائل کے لئے جدوجہد کی اور اسی پاداش پارٹی کے رہنماؤں، کارکنوں کو شہید کیا گیا اور پارٹی کو دیوار سے لگانے کی کوشش کی گئی لیکن امر دور سے اب تک جتنے بھی مسائل اور مشکلات پارٹی کے دوستوں نے صبر تحمل وبرداشت کا مظاہرہ کیا لیکن قومی جدوجہد سے پیچھے نہیں ہٹیں انہوں نے کہا کہ ہم مردم شماری اور ترقی کے مخالف نہیں مردم شماری صاف وشفاف ہونے چا ہئے ایسا نہ ہو اس میں صوبائی حکومت کی سیاسی مداخلت پر حکمران خاموشی اختیار کریں پارٹی کی جانب سے معزز عدالت عالیہ نے جو تاریخی فیصلہ سنایا کہ افغان مہا جرین کو دور رکھا جائے بلوچ آئی ڈی پیز کو شامل کیا جائے ایک مثبت اقدام ہے اب حکمرانوں ، ریاستی اداروں کے ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ عدالت عالیہ کے فیصلے کو من وعن اس پر عملدرآمد کیا جائے لیکن دیکھنے میں آرہا ہے کہ جو ہمارے خدشات اور تحفظات وہ ابھی تک دور نہیں کئے جا رہے اور اب تک مردم شماری کے عمل کو بھی مشکوک بنایا جا رہا ہے ایسا اقدام کسی بھی صورت درست نہیں اسی لئے ہم نے مردم شماری خانہ شماری سے قبل بہت سے تحفظات کا اظہار کیا اور اب جو درست ثابت ہو رہے ہیں انہوں نے کہا کہ اسی طرح سی پیک کے حقیقی ترقی وخوشحالی کا عمل تو بہتر ہے لیکن گوادر میں اب تک عوام کو پینے کے صاف پانی میسر نہیں ہمارے لو گوں کی انسانی بنیادی ضروریات پورے نہیں کئے جا رہے ہم چاہتے ہیں کہ گوادر کے اختیارات بلوچستان کو دیئے جائے اور ہماری تاریخ تہذیب، وتمدن کئی ملیا میٹ نہ ہو فوری طور پر قانون سازی کی جائے تاکہ باہر سے آنے والے لو گوں کو شناختی کارڈ، پاسپورٹ اور انتخابی فہرستوں میں ان کی معانت ہونی چاہئے ہم حقیقی ترقی وخوشحالی کو ضرور قبول کرینگے جس سے بلوچوں کی زندگی میں مثبت تبدلیاں رونما ہو سکے اور جس سے بلوچ اور بلوچستانی مستفید ہو سکے انہوں نے کہا کہ بلوچستان نیشنل پارٹی واضح کر دینا چاہتے ہیں کہ مردم شماری وخانہ شماری کی شفافیت ضروری ہے اب تک جو مخدوش بلوچ علاقے ہیں ان میں شماریات کا عمل انتہائی ست روی کا شکا رہے محکمہ شماریات اور انتظامیہ کے ارباب اختیار کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ ان علاقوں میں شماریات کے عمل کو تیز کریں تاکہ بروقت مردم شماری یقینی بن کر مکمل ہو سکے تاکہ وہاں کے عوام کے انسانی حقوق پامال نہ ہو اور بلوچستان کے دور دراز علاقوں میں تمام عوام کو شمار کیا جائے۔

بشکریہ: ڈیلی آزادی

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

13 miners killed, 5 trapped due to explosion in coal mine near Quetta

QUETTA: At least 13 coal mine workers were killed and five others trapped following a …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com