Home / Archives / پارلیمنٹ میں موثر نمائندگی نہ ہونے کی وجہ سے بلوج پسماندہ ہیں، جان محمد دشتی

پارلیمنٹ میں موثر نمائندگی نہ ہونے کی وجہ سے بلوج پسماندہ ہیں، جان محمد دشتی

تربت:معروف بلوچ ادیب اوربی این پی کے مرکزی رہنما و NA271قومی اسمبلی کے نامزد امیدوارجان محمد دشتی نے کہا ہے کہ قوم کو حقیقی رہنمائی کی ضرورت ہے ، بلوچستان میں بلوچوں کی پارلیمنٹ میں موثر نمائندگی نہ ہونے کی وجہ سے بلوچ آج بھوک وافلاس اور کسمپرسی کی زندگی گزار رہے ہیں۔

ایسے ناموافق صورتحال میں بھی وہ اپنی تعلیمی ذمہ داریوں کو پورا کر رہے ہیں ، نوجوانوں کو چاہیے کہ وہ مفادات کی سیاست ترک کر کے قوم کو حقیقی نمائندوں کی فراہمی اور بلوچ کی آواز کو آگے بڑھانے میں کردار ادا کریں، آئندہ عام انتخابات میں قوم کو صحیح اور غلط کا ادراک کرنا ہوگا اور اس شعور کوا جاگر کرنے میں نوجوانوں کا کردار سب سے اہم ہے ، بلوچ قوم کی آواز کو اجاگر کرنے کے لیے پارلیمنٹ ایک مناسب پلیٹ فارم ہے ایسے پلیٹ فارم پر موثر آواز اٹھانے والی قیادت کا انتخاب قوم خود کرے ۔

ان خیالات کا اظہار حلقہ این اے271کے نامزدامیدوار جان محمد دشتی نے بی ایس او کے ایک وفد سے ملاقات کے دوران کیا ، انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں ہر لیڈر کی اپنی جگہ حیثیت سے انکار نہیں ہے مگر سب سے مقدم اور محترم قوم خود ہےاوراچھےاوربرےکی تمیز قوم خود ہی کرسکتی ہے،انہوں نےکہا کہ قومی ترقی اورشعورو آگاہی میں قومی کردار کا ادراک ہے اور اسی میں یقین رکھتے ہیں ۔

page1image15744page1image15904

انہوں نے کہا کہ نوجوان خود میں پوشیدہ اوصاف استوار کر کے قومی نمائندگی کا بیڑہ سر پر اٹھا لیں اور قوم کی صحیح رہنمائی کریں ، جان محمد دشتی نے مزید کہا کہ اس وقت بھی بلوچ کے لیے ایک موثر جمہوری آواز نا گزیر ہے اور اس مقصد کی آبیاری کے لیے نوجوانوں کے کردار کو بنیادی اہمیت حاصل ہے اور نوجوان ہی مثبت تبدیلی کے ضامن ہیں اور نوجوان اگر صحیح ہدف اوراچھے اقدار کی پیروی کریں گے تو بہت جلد وہ اپنی قوم کو اپنے پاؤں پر کھڑا دیکھ پائیں گے۔

اس موقع پر بی ایس اوکے وفد کی قیادت بی ایس او تربت زون کے صدر عظیم بلوچ اور نائب صدرکریم شمبے کر رہے تھے جنہوں نے اس موقع پر اپنے خیالات کے اظہار کرتے ہوئے کہا کہ نوجوانوں کو جان محمد دشتی جیسے دور اندیش اور مدبر شخصیت کی قیادت پر ذرہ برا بر بھی شک نہیں ہے اور قوم جانتی ہے کہ موصوف نہ بکاؤ ہیں اور نہ قوم کو بیچنے پر یقین رکھتے ہیں اور نوجوان سمجھتے ہیں کہ بلوچستان کے وقت اور حالات کے تقاضوں کے عین مطابق جان محمد دشتی جب قوم کی رہنمائی کے لیے میدان میں اترے بلوچ قوم کو ان کی پیروی دل و جان کے ساتھ کرنی چاہیے ۔

Source: dailyazadiquetta.com

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

Teachers action committee protest against proposed education act

QUETTA: The Balochistan Educational Employees Action Committee on Saturday protested outside Provincial Assembly against Provincial …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com