Home / Archives / ہماری سیاسی جنگ اقتدار کیلئے نہیں وسائل پر اختیار کیلئے ہے، لشکری رئیسانی

ہماری سیاسی جنگ اقتدار کیلئے نہیں وسائل پر اختیار کیلئے ہے، لشکری رئیسانی

کوئٹہ: بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنما نوابزادہ میر حاجی لشکری خان رئیسانی نے کہا ہے ہماری سیاسی جنگ اقتدار کیلئے نہیں بلکہ اپنے ساحل وسائل پر اختیار کیلئے ہے۔

،جعلی سیاسی دعوٰی نہیں کرتے عوام کی طاقت سے بلوچستان میں مفت تعلیم اورصحت کی سہولیات کی فراہمی کو یقینی بناتے ہوئے غربت، بے روزگاری، پسماندگی کا خاتمہ کرینگے ۔ باپ دادا کی طرح عوام سے ملنے والی عزت ہی میرا اصل سرمایہ ہے۔

عوام کے وقار کی جنگ آخر دم تک لڑتا رہوں گا۔ ہماری زندگیوں سے بدحالی کا خاتمہ تب ممکن ہے جس دن ہم قومی

امانت یعنی ووٹ کو حقیقی امانت دار تک پہنچائیں گے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز سریاب کلی چل ، ماسٹر کالونی،جوائنٹ روڑ ریلوے کالونی،ہدہ قلات اسٹریٹ ،کلی دیبہ، ہدہ شیخ حسینی میں منعقدہ اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

نوابزادہ لشکری خان رئیسانی کی قیادت پر اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے ٹھیکیدار حاجی نیاز بنگلزئی، ڈاکٹر صمد بنگلزئی، حفیظ رئیسانی نے ساتھیوں سمیت بلوچستان نیشنل پارٹی میں شمولیت کا اعلان کیا ۔

اجتماعات سے پارٹی رہنماؤں اختر حسین لانگو، ملک نصیر شاہوانی ، ملک سکندر شاہوانی ، میر غلام رسول مینگل ، قاری اختر شاہ کھرل، آغا خالد شاہ دلسوز ، ثناء مسرور و دیگر نے بھی خطاب کیا ۔ اس موقع پر نوابزادہ میر سخی جان رئیسانی بھی موجود تھے ۔ اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے نوابزادہ میر حاجی لشکری خان رئیسانی کا مزید کہنا تھا کہ ہمارے حصہ میں آنے والی بدحالی آس ن سے نہیں لکھی گئی ہے۔

بلکہ یہ با اختیار لوگوں کی ناانصافی کے باعث ہے بلوچستان نیشنل پارٹی سمجھتی ہے کہ صوبے کے عوام کی حالت میں تبدیلی لانے کیلئے ہمیں قومی اختیار کی ضرورت ہے تاکہ ہم قدرتی وسائل پر اپنا اختیار حاصل کر سکیں۔

ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان کے لوگ انتہائی کھٹن صورتحال میں اپنی زندگی کے ایام گزاررہے ہیں۔ ایسے میں ان کا دفاع وہ لوگ ہی کرسکتے ہیں جو تکلیف کے ان مراحل سے گزر رہے ہیں اور اپنے باپ دادا کی قبروں کو جواب دہ ہیں اوراس پارٹی کی تاریخ سرزمین کے دفاع کیلئے قربانیوں سے بھری پڑی ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ ایک مرتبہ پھر بالادست لوگوں کی جانب سے عوام کے حقیقی نمائندوں کا راستہ روکنے کیلئے ایسے لوگوں کو آگے لایا جارہا ہے جو عوام کی پسماندگی میں اضافہ اور بدحالی کا سبب بنیں جنہیں عوام کی بدحالی سے سے نہیں کرپشن سے غرض ہو ایسے جعلی لوگوں کا راستہ مشترکہ جدوجہد یکجہتی اور اتحاد سے ہی روکا جا سکتا ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ اپنے آباواجداد کی طرح عوام کے غضب شدہ حقوق انہیں دلانے اورعوام کو طاقتور بنانے میں کوتائی نہیں کرینگے ۔ ہمارے نزدیک عزت اور وقار سے زیادہ عزیز کوئی چیز نہیں ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے اگر قوم کے وقار کی سربلندی میں غفلت برتی تو عوام کی بدحالی کے اتنے ہی ذمہ دار ہونگے جتنی جعلی قیادت اور پارٹیاں ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ صوبے میں آباد تمام اقوام کو تہیہ کرنا چاہئے کہ بلوچستان کے فیصلوں اور وسائل کے استعمال کا اختیار بلوچستان کے وارثوں کے ہاتھ میں ہو

Source: dailyazadiquetta.com

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

بلوچستان خشک سالی سے نمٹنے کیلئے خریدی گئی مشینری کو زنگ لگ گیا،ملازمین مفت تنخواہیں لینے لگے

کوئٹہ: بلوچستان میں خشک سالی سے ٹنے کے لئے محکمہ آبیاشی کی جانب سے خریدی …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com