Home / Archives / بی این پی اور جمعیت کا انتخابی اتحاد کو وسعت دینے کا اعلان، کوئٹہ موسی خیل اور لسبیلہ میں بھی سیٹ ایڈجسٹمنٹ

بی این پی اور جمعیت کا انتخابی اتحاد کو وسعت دینے کا اعلان، کوئٹہ موسی خیل اور لسبیلہ میں بھی سیٹ ایڈجسٹمنٹ

کوئٹہ: جمعیت علماء اسلام اور بلوچستان نیشنل پارٹی کے درمیان سیٹ ٹو سیٹ ایڈ جسٹمنٹ کاسلسلہ جاری، جھالاوان کے بعد موسٰی خیل، لسبیلہ اور کوئٹہ کے نشستوں پر بھی دونوں جماعتوں کے اتحاد کا فیصلہ کر لیا گیا۔

ان خیالات کا اظہار بلوچستان نیشنل پارٹی کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر جہانزیب جمالدینی اور جمعیت علماء اسلام کے صوبائی جنرل سیکریٹری ملک سکندر ایڈووکیٹ نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر جمعیت علماء اسلام کے مرکزی سیکریٹری اطلاعات حافظ حسین احمد، بی این پی کے ساجد ترین اور موسٰی بلوچ سمیت دیگر بھی موجود تھے۔

بی این پی کے سیکریٹری جنرل ڈاکٹر جہانزیب جمالدینی نے کہا کہ دونوں جماعتوں نے طویل مشاورت کے بعد این اے272بیلہ، این اے258اور پی بی25پر سیٹ ٹو سیٹ ایڈجسٹمنٹ کا اعلان کیا ہے۔

این اے258پر بلوچستان نیشنل پارٹی کے امیدوار حق نواز بزدار جمعیت علماء اسلام کے نامزد امیدوار امیر زمان کے حق کے دستبردار ہوگا اور این اے272لسبیلہ گوادر پر جمعیت علماء اسلام کے امیدوار اللہ بخش سردار اختر جان مینگل کے حق میں دستبردار ہوں گے۔

کوئٹہ کے صوبائی اسمبلی کی نشست پی بی25سے بی این پی کے نامزد امیدوار لقمان خان جمعیت علماء اسلام ف کے نامزد امیدوار ملک سکندر ایڈووکیٹ کے حق میں دستبردار ہوں گے، انہوں نے کہا کہ دو قومی اسمبلی جبکہ صوبائی اسمبلی کی ایک نشست دونوں جماعتوں کے مشترکہ امیدوار ہوں گے۔

ڈاکٹرجہانزیب جمالدینی کا کہنا تھا کہ کسی حداببی خدشات موجود ہیں لیکن ہم الیکشن کمیشنٖ آف پاکستان سے پرزور مطالبہ کرتے ہیں کہ صاف اور شفاف انتخابات کا انعقاد یقینی بنانے کیلئے بھر پور کردار ادا کرے کیونکہ صاف اور شفاف انتخابت کے انعقاد سے نہ صرف مضبوط جمہوری حکومت قائم ہوگی بلکہ ملکی معیشت اور قیام امن کو فروغ ملے گا۔

اس موقع پر ملک سکندر ایڈووکیٹ نے کہا کہ حق رائے دہی کا اختیار سب کو ہونا چاہئے جس پر قدغن لگائے جانے سے رواں ہونے والے انتخابت پر منفی اثرات مرتب ہوں گے، انہوں نے کہا کہ ایک جماعت کو مکمل چوٹ دی گئی ہے جو بلوچستان کے سیاسی ومذہبی اور قوم پرست جماعتوں کیلئے باعث تشویش ہے۔

صاف شفاف انتخابات کے انعقاد کیلئے الیکشن کمیشن سمیت ام سیاسی وجمہوری جماعتیں اپنا بھرپور کرداراداکریں گی، ایک سوال کے جواب میں جمعیت علماء اسلام کے مرکزی سیکریٹری اطلاعات حافظ حسین احمد کا کہنا تھا کہ قوم اور مذہب پرست جماعتوں کے درمیان اتحاد کا سفر طویل ہے ۔

ستر کی دہائی سے اب تک کئی مواقع پر نہ صرف بلوچستان بلکہ ٰبر پختونخواہ میں بھی اتحاد و یکجہتی کا مظاہرہ کیا ہے، انہوں نے کہا کہ متحدہ مجلس عمل کی جانب سے اپنے مخصوص کوٹے کے تحت جماعتوں کیساتھ اتحاد کر سکتے ہیں اور اتحاد کے بعد ایم ایم اے کی مرکزی کی قیادت کو آگاہ کرنا امیدواروں پر فر ض ہے جو ہم کردیا۔

اس موقع پر بی این پی رہنماء ساجد ترین کا کہنا تھا کہ آئندہ عام انتخابات میں نوزائیدہ جماعت کو مسلط کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ، عوام کی ذمہ داری ہے کہ وہ ان عناصر کا راستہ روکیں جو کہ وسائل لوٹ رہے ہیں

Source: dailyazadiquetta.com

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

Quetta re-emerges as peaceful city: CM Kamal

QUETTA: Chief Minister Balochistan Jam Kamal Khan Aliyani has said, due to sacrifices of security …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com