Home / Archives / افغان مہاجرین کو شہریت دینا قبول نہیں کرینگے ،خورشید جمالدینی

افغان مہاجرین کو شہریت دینا قبول نہیں کرینگے ،خورشید جمالدینی

نوشکی: بلوچستان نیشنل پارٹی کے سینٹرل کمیٹی کے ممبر میرخورشید جمالدینی نے کہا کہ افغان مہاجرین کو دستاویزات دے کر انکو شہریت دینا یہاں کے عوام حقوق پر ڈھاکہ ڈالنے کی مترادف ہیں افغان مہاجرین کو باعزت طریقے سے انکے وطن واپسی کو یقینی بنایا جائے یا دوسری صورت میں ان افغان مہاجرین کو کیمپوں تک محدود کیا جائے ۔

افغانستان کے جن علاقوں میں حالات بہتر ہیں وہاں کے باشندوں کو واپس بھیجا جائے جبکہ دیگر مہاجرین کا ڈیٹا اکھٹا کیا جائے ، مہاجرین کو ووٹ ڈالنے، جائیداد خریدنے ، شناختی کارڈ کا حق نہ ہو تو وہ یہاں رہ سکتے ہیں ،آج نہیں تو کل مہاجرین کو جانا ہوگا ملک میں غیر رجسٹرڈ غیر ملکی کاروبار کر رہے ہیں یہ مسئلہ پورے ملک کا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پہلے بھی مطالبہ کیا گیا تھا کہ مہاجرین کو کمپیوں میں رکھا جائے، افغانی پاکستان میں جرائم میں ملوث ہیں وہ افغانستان جا کر اپنے ملک کی بہتری میں کردار ادا کر سکتے ہیں ۔ منشیات اور کلاشنکوف کلچر افغان مہاجرین کے جانب سے پھیل رہی ہے ۔

امن وامان اور کاروبار پر منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں ۔ہمارے کاروبار اور جائیدادوں پر قابض ہو چکے ہیں اگر ان مہاجرین کو شہریت دینے کی کوشش کی گئی تو بی این پی بھرپور احتجاج کریگی۔ اور بھرپور مخالفت جاری رکھے گی ۔ کیونکہ افغان مہاجرین کا سارا بوجھ بلوچستان کے اوپر ہے بلوچستان کے عوام نے بہت انکی مہمان نوازی کی ۔ اور اب بی این پی انکی باعزت طریقے سے واپسی چاہتی ہے

Source: dailyazadiquetta.com

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

میر یوسف عزیز مگسی کے مجسمے کو دوبارہ تعمیر کیا جائے، غلام نبی مری

کوئٹہ:بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنماء غلام نبی مری نے اپنے ایک بیان میں کہا …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com