Home / Archives / مزاحمت کی سیاست کے بغیر نیشنل پارٹی کے پاس دوسرا کوئی راستہ نہیں ، حاصل بزنجو

مزاحمت کی سیاست کے بغیر نیشنل پارٹی کے پاس دوسرا کوئی راستہ نہیں ، حاصل بزنجو

صحبت پور: نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر سینیٹر میر حاصل خان بزنجو نے کہاہے کہ نیشنل پارٹی کو حاکم وقت کیخلاف آواز حق بلند کرنا ہوگا ،مذاہمت کی سیاست کے بغیر نیشنل پارٹی کے پاس دوسرا کوئی راستہ نہیں ہے ،سیاسی مذاہمت سے ہی پارٹی کو منظم کیا جا سکتا ہے ،سماج میں سیاسی مذاہمت کی سیاست کو لے کر ہمیں آگے چلنا ہوگا ،عوام کے معاشی وسیاسی حقوق کیلئے باہر نکلیں اور انکے حقوق کیلئے تحریک چلائیں ،
یہ بات انہوں نے نیشنل پارٹی صحبت پور کے ورکرز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی ،انہوں نے کہا کہ یہ تاثر بالکل غلط ہے کہ نیشنل پارٹی کی حکومت کی تشکیل میں اسٹیلشمنٹ کا کوئی کردار رہا ہے بلکہ نواز شریف اور سیاسی جماعتوں نے ملکر حکومت تشکیل دی ،بلوچستان میں بے روزگاری گھمبیر مسئلہ بن گیا ہے ،سیندک ،ریکوڈک اور کچھی کینال جیسے منصوبوں کی تکمیل سے بے روزگاری پر قابو پایا جاسکتا ہے بلوچستان کی معیشت میں نصیر آباد کا بڑا رول ہے اب تک صوبے کا سب سے بڑا وسیلہ گرین بلٹ ہے ،معیشت کی بہتری کیلئے وسائل کو بہتر انداز میں استعمال لانے کی ضرورت ہے ،سی پیک اور ریکوڈک میں سعودیہ کی شمولیت سے ریجن میں موجود صورتحال کا خراب ہونا کا خطرہ موجود ہے ،حکومت کوئی بھی معاہدہ کرنے سے پہلے علاقائی اور ہمسایہ ممالک کے مفادات کو بھی اپنے مدنظر رکھ کر حکمت عملی ترتیب دیں تاکہ علاقائی تصادم کے خطرات کم ہوسکیں،نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل محراب مری نے کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ افغان مہاجرین کو شہریت دینی کی باتیں حکمرانوں کی خام خیالی ہے اس کی ہر گز اجازت نہیں دی جائے گی ،انہوں نے کہا کہ افغان مہاجرین کی فوری واپسی کیلئے اقدامات اٹھانے کی خدمت ہے
،نیشنل پارٹی کے نائب صدر میر رجب علی رند نے کہاہے کہ بلوچستان کے حالات کو دانستہ خراب کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ،بلوچستان کو اسلام آباد کالونی کے طورپر ملانے کی کوشش کر رہے ہیں ،حالیہ انتخابات میں جس طرح بلوچستان میں مداخلت کی گئی اور سینیٹ انتخابات میں جو طریقہ کار اپنا یا گیا وہ انتہائی قابل مذمت ہیں ،نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات جان محمد بلیدی نے کہاہے کہ لسبیلہ ڈویژن میں شامل کرنے کی تجویز منافقانہ اقدام ہے جو ساحل بلوچستان کو الگ کرکے برائے راست اسلام آباد کے زیر تسلط لانے کی ایک سازش ہے جسے ہر گز بلوچستان کے عوام تسلیم نہیں کریں گے ،اجلاس سے منصور بلوچ ،رفیق احمد کھوسہ ،غلام محمد گولہ ،خیر جان بلوچ،خیر بخش بلوچ ،عثمان بلوچ،علی احمد لانگو،میر عبدالرسول بلوچ ،راجب بلیدی ،راوت خان بلوچ ،رستم خان کھوسہ ،نصیر احمد بلیدی اور دیگر رہن ؤں نے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ حالیہ انتخابات میں ریکارڈ دھاندلی کے ذریعے پارٹی کو ہرایا گیا ،انہوں نے کہاکہ پارٹی امیدواروں کو عوام کی بھر پور ح یت حاصل تھی لیکن نادیدہ قوتوں نے عوام کے مینڈیٹ پر شب خون مارک اپنے من پسند افراد کو کامیابی دلائی ،انہوں نے کہاکہ سیاسی کارکنوں پر جھوٹے مقدمات قائم کئے گئے ہیں ،جھوٹے اور بے بنیاد ایف آئی آر سے کارکنوں کے حوصلوں کو پست نہیں کیا جاسکتا ہے ،جلسے میں مطالبہ کیا گیا کہ فوری طورپر جھوٹے مقدمات اور ایف آئی آر ختم کئے جائیں۔

Source: dailyazadiquetta.com

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

میر یوسف عزیز مگسی کے مجسمے کو دوبارہ تعمیر کیا جائے، غلام نبی مری

کوئٹہ:بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنماء غلام نبی مری نے اپنے ایک بیان میں کہا …

Leave a Reply

'
Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com