Home / Archives / بی ایم سی بحالی تحریک کا بلوچستان اسمبلی کے سامنے دھرنا جاری،طلباء و طالبات و ملازمین کی بڑی تعداد میں شرکت

بی ایم سی بحالی تحریک کا بلوچستان اسمبلی کے سامنے دھرنا جاری،طلباء و طالبات و ملازمین کی بڑی تعداد میں شرکت

کوئٹہ: تحریک بحالی بی ایم سی کی جانب سے صوبائی اسمبلی کے سامنے دھرنا دیا گیا دھرنے میں ورکرز اسوسی ایشن بی ایم سی ایپکا کوئٹہ بی ایس او بی اس او پجار بلوچ سٹوڈنس ایکشن کمیٹی پی ایم اے اور مزدور دوست نتظیموں، بولان میڈیکل کالج کی طالبات نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ دھرنے سے ایپکا کے صوبائی صدر داد محمد بلوچ اور عبداللہ خان صافی نے خطاب میں گزشتہ روز طلباء طالبات و ملازمین کے پر امن مظاہرے پر پولیس کی جانب سے ہلہ اور تشدد کی مذمت کی اور اس بات پر حیرت کا اظہار کیا کہ طالبات پر ہونے والے تشدد جس کی ویڈیوز مجود ہیں اور اعلٰی حکام خاص کر صوبائی وزیر داخلہ نے یقین دہانی کرای تھی مگر ابھی۔تک کسی قسم کی کاروائی عمل میں نہیں لائی گئی ہے۔

ملازمین ملازمین کی بلاجواز تنخواہوں کی بندش کا مسئلہ ابھی تک حل نہیں کیا گیا وی سی نے ایک انسانی و انتظامی مسئلہ کو لسانی رنگ دینے کی گناونی کوشیش کی ہے جس پر وی سی کا محاسبہ ہونا چاہے طلباء کے مسائل جوں کے توں ہیں تمام مسائل کا،حل بی ایم سی بحالی میں ہے بی،ایم سی بحالی تک تحریک،جاری رہے گئی اس ہر کسی قسم کا سمجوتہ نہیں کیا جائے گا اور جن کی ایماء پر طالبات پر لاٹھی چارج کیا گیا انکا محاسبہ کیا جانا ناگیزر ہے تاکہ ائندہ کوہی بھی خواتین پر اس طرح سڑکوں پے کسی کو ہاتھ اٹھانے کی جرت نہ ہو شام گیے تک دھرنہ جاری رہا اپوزشن رہنما بلوچستان ملک سکندر ایڈوکیٹ نے دھرنے اکر اظہار یکجہتی کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ روز افسوسناک واقعہ کی مذمت کرتے ہیں۔ اور اسمبلی کے فلور پر سب سے پہلے ہم نے اپ کا مسلہ اٹھایا اپوزشن کی جانب سے بھر پور تعاون کی یقین دہانی کراہی قائدین نے خطاب میں کہا کہ گرفتاریوں اور لاٹھی چارج سے ڈرنے والے نہیں مگر طالبات پر اس طرح کے شرمناک ہلہ کسی بھی صورت قبول نہیں نہ ہی کسی معاشرے میں اس کی مثال نہیں ملتی قائدین نے کہا کہ گورنر بلوچستان کا جانبدارانہ کردار افسوس ناک ہے گورنر کو جانبدار نہیں ہونا چاہے۔

کسی بھی جانبدار۔شخصیت کو اس کرسی پر نہیں ہونا چاہے قائدین نے کہا کہ ہونا تو یہ چاہے تھا کہ وی سی کے اس طرح کے شرمناک ہتکھنڈوں کے بعد اس کو اخلاقی طور پر خود مستعفی ہونا چاہے تھا مگر وی سی اپنی ہٹ دھرمی پیقایم ہے حکومت فی الفور کارواہی کرے وی سی کے پاس اپنی کارکردگی پیش کرنے کو کچھ بھی نہیں سوا جھوٹے پروپیگنڈے کے ایک ناہل۔وی سی نے پورے صوبے کو یرغمال کیا ہوا ہے۔

طلباء طالبات ملازمین احتجاج پر ہے اور احتجاج کا داہرہ پورے صوبے تک پھیل چکا ہے شاہ علی بگٹی صدر یونیورسٹی ایملاز اسو سی اشین نے بی ایم سی بحالی کی حمایت کرتے ہوئے حکومت کی خاموشی کی مذمت کی اور یقین دلایا کہ یونیورسٹی ایمپلایز اسو سی اشین اپ کے شانہ بشانہ احتجاج میں شریک ہوگی شام کو حکومت کی درخواست پر دھرنہ ملتوی کرنے کا۔اعلان کیا گیا اور ائندہ کا لایحہ عمل۔طے کرنے کے لیے بی ایم سی بحالی تحریک۔ ایگزیکٹو باڈی کا اجلاس کل صبح 11بجے احتجاجی کیمپ میں طلب کیا گیا ہے

Source: Daily Azadi Quetta

Share on :
Share

About Administrator

Check Also

بولان میڈیکل کالج کے رجسٹرار کی تعیناتی سپریم کورٹ نے کالعدم قرار دیدی

اسلام آباد: سپریم کورٹ نے بولان میڈیکل کالج کی سینئر رجسٹرار کی پوسٹ پر ایف پی …

Leave a Reply

Share
Share
Social Media Auto Publish Powered By : XYZScripts.com